تمنا مدتوں سے ہے جمال مصطفیٰ دیکھوں



تمنا مدتوں سے ہے جمال مصطفیٰ دیکھوں
امام الانبیاء دیکھوں، حبیب کبریا دیکھوں

وہ جن کے دم قدم سے صبح نے بھی روشنی پائی
منور کر دیا جس نے، فضا وہ رہنما دیکھوں

وہ جن کی برکتوں سے ابر و باراں بستے عالم میں
تمنا قلب مضطر کی وہ درِّ بے بہا دیکھوں

قدم باہر مدینہ سے تصور میں مدینہ ہے
الہی یا الہی عظمتوں کی انتہا دیکھوں

یہ دنیا بے ثبات و بے وفا و غم کا گہوارا
یہ ہے مطلوب: دارِ بے وفائی میں وفا دیکھوں
تمنا مدتوں سے ہے جمال مصطفیٰ دیکھوں

وہ مبدأ خلق عالم کا، درود ان پر سلام ان پر

میرے مولی یہ موقع دیں کہ ختم الانبیاء دیکھوں


کبھی ہو حسن کی محفل، کبھی ہو شوق کا منظر
کبھی آنسو کی زنجیروں میں عاشق کی صدا دیکھوں


رَسُولٌ قَاسُم الْخيْرَاتِ فِی الدُّنْيَا وَ فِی الْعُقْبی
شفیق از نفس ما در ما، نبی مجتبیٰ دیکھوں

در جنت پہ حاضر ہووں رسول پاک کے ہم راہ

شفاعت کا یہ منظر یا خدایا میں رضا دیکھوں

تمنا مدتوں سے ہے جمال مصطفیٰ دیکھوں
امام الانبیاء دیکھوں، حبیب کبریا دیکھوں


بشکریہ  : محمد سعید بھائی 

<<< پچھلا صفحہ اگلا صفحہ >>>

تمنا مدتوں سے ہے جمال مصطفیٰ دیکھوں پہ 2 تبصرے ہو چکے ہیں

اگر آپ (بلاگ اسپاٹ کی دنیا میں) نئے ہیں اور درج بالا تحریر پر آپ کا قیمتی تبصرہ کرنے کا ارادہ ہے تو ۔ ۔ ۔ Comment as میں جا کر“ANONYMOUS" پر کلک کر کے اپنا تبصرہ لکھ دیں – ہاں آخر میں اپنا نام لکھنا نہ بھولیں -

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔


تعمیر نیوز

اس بلاگ کی مذید تحاریر ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔

Powered by Blogger.